23

خاتون ڈاکٹر کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد زندہ جلا دیا گیا

حیدر آباد ( سی پی پی) بھارت میں اکثر اجتماعی زیادتی کے کیس سامنے آتے رہتے ہیں جس کے باعث اسے دنیا کا ریپ کیپٹل بھی کہا جاتا ہے ۔ اب ایک اور اجتماعی زیادتی کے کیس نے بھارت کو پوری دنیا میں شرمندہ کردیا ہے۔اجتماعی زیادتی کا تازہ واقعہ بھارتی ریاست تلنگانہ میں پیش آیا جہاں ایک خاتون ویٹرنری ڈاکٹر کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد زندہ جلا کر قتل کردیا گیا ۔اجتماعی زیادتی کا واقعہ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب پیش آیا۔

متاثرہ کی بہن کے مطابق رات کے وقت ویٹرنری ڈاکٹر نے اسے فون کرکے کہا کہ میری سکوٹی پنکچر ہوگئی ہے، یہاں آس پاس صرف ٹرک ہی ہیں جس کی وجہ سے مجھے بہت ڈر لگ رہا ہے۔ ڈاکٹر کی بہن نے اسے مشورہ دیا کہ سکوٹی چھوڑ کر ٹیکسی بک کراکے گھر آجاﺅ لیکن وہ کبھی گھر نہیں پہنچی اور اس کا فون بھی بند ہوگیا۔

گھر والوں نے 22 سالہ ویٹرنری ڈاکٹر پریانکا ریڈی کی تلاش شروع کی لیکن کوئی سراغ نہ ملنے پر رات 11 بجے پولیس سے رابطہ کیا۔ پولیس نے تلاش شروع کی تو رات گئے مقتولہ کی لاش ایک پل کے پاس جلی ہوئی ملی، تحقیقات پر یہ بات سامنے آئی کہ لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد زندہ جلا کر قتل کیا گیا ہے۔پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹیج اور دیگر شواہد کی بنا پر 4 ملزمان محمد پاشا، نوین ، کیشولو اور شیوا کو گرفتار کرلیا ہے جن سے تفتیش جاری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں