افغانستان کے شہر جلال آباد جیل پر داعش کا حملہ، 29 افراد ہلاک، 18 گھنٹوں کی لڑائی کے بعد 8 حملہ آور بھی مارے گئے

کابل: (سی پی پی) غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان جیل پر داعش کے حملے میں 29 افراد ہلاک وزارت دفاع کے ترجمان فواد امان کا کہنا ہے کہ آپریشن مکمل کر لیا گیا ہے۔جبکہ افغان سکیورٹی فورسز نے 18 گھنٹوں کی لڑائی کے بعد 8 حملوں کو آور کو مار ڈالا ہے۔ننگر گورنر ہاو¿س کے ترجمان عطاء اللہ کا کہنا ہے کہ اس حملے میں 29 افراد ہلاک ہوئے ہیں جبکہ 50 کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔دوسری طرف افغان طالبان کی طرف سے اس حملے کی تردید کی گئی طالبان کے سیاسی ترجمان سہیل شاہین نے امریکی خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا کہ جلال آباد حملے کے پیچھے ان کا گروپ ملوث نہیں ہے۔ ہم نے جنگ بندی کی ہے اور ہم ملک میں اس طرح کے کسی بھی حملے میں ملوث نہیں۔علاوہ ازیں طالبان نے جمعرات کی رات میں مشرقی صوبے لوگر میں ہونے والے خودکش حملے میں ملوث ہونے کی تردید کی۔سری جانب ایک سیکیورٹی ذرائع نے اے ایف پی کو بتایا کہ حملے کے وقت جیل میں 1700 سے زائد قیدی موجود تھے جس میں زیادہ تر داعش اور طالبان کے جنگجو ہیں۔اس حوالے سے ننگرہار کے گورنر کے ترجمان آیت اللہ خوگیانی نے خبررساں ادارے کو بتایا کہ حملے کے دوران فرار ہونے والے تقریباً 700 قیدیوں کو دوبارہ گرفتار کرلیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں